Uncategorized

اومیکرون کو ہلکے میں نہیں لینا چاہیے: حکومت

حکومت کوکورونا کے اومیکرون کو ہلکے میں نہیں لینے کی وارننگ دیتے ہوئے کہا ہے کہ ہیلتھ ورکر، کورونا ویریئراور بزرگ شہریوں کو کووڈ ویکسین کی بوسٹرڈوز (اضافی خوراک) وہی ہوگی جو ویکسین انہوں نے پہلے لی ہے۔
صحت اور خاندانی بہبود کی مرکزی وزارت کے سکریٹری لو اگروال، نیتی آیوگ کے ہیلتھ ممبر ڈاکٹر وی کے پال اور انڈین کونسل آف میڈیکل ریسرچ کے ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر بلرام بھارگو نے بدھ کو یہاں ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ اومیکرون کو ہلکے میں نہ لیا جائے۔ اس سے بچنے کے لیے کووڈ کے پروٹوکال پر سختی سے عمل کیا جانا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ اومیکرون کو قدرتی قوت مدافعت کے ویکسین کے طور پر لینے کے مہلک نتائج ہو سکتے ہیں۔
مسٹر اگروال نے کہا کہ ملک میں کووڈ ویکسینیشن چل رہی ہے اور وبا کے مہلک اثر سے بچنے کے لیے کووڈ ویکسین ضرور لینی چاہیے اور کووڈ کے معیارات پر لازمی طور پر عمل کرنا چاہیے۔
انہوں نے کہا کہ ملک میں 90.8 فیصد مستحق آبادی کو کووڈ ویکسین کی پہلی ڈوز اور 69.9 فیصد کو دوسری ڈوز دی گئی ہے۔ اس کے علاوہ 15 سے 18 سال کی عمر کے افراد کو ایک کروڑ سے زیادہ ویکسین دی گئی ہے۔ ملک میں کووڈ ویکسین کی پہلی خوراک 22 ریاستوں میں 90 اہل آبادی کو دی گئی ہے اور دوسری ڈوزبھی 19 ریاستوں میں 70 فیصد مستحق آبادی کو دی جا چکی ہے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close