China

چین کے چینگدو میں واقع امریکی قونصلیٹ بند کرنے کا حکم

چین نے آج جمعے کے روز ملک کے جنوب مغرب میں واقع اہم شہر چینگدو میں امریکی قونصل خانے کی بندش کے احکامات جاری کیے ہیں۔ یہ جوابی اقدام امریکا کے شہر ہیوسٹن میں چینی قونصل خانے کو بند کیے جانے کے تین روز بعد سامنے آیا ہے۔چینی وزارت خارجہ کی جانب سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ یہ فیصلہ امریکا کے غیر منطقی اقدامات کا قانونی اور ضروری جواب ہے۔واضح رہے کہ چینی دارالحکومت بیجنگ میں امریکی سفارت خانے کے علاوہ پانچ دیگر شہروں میں امریکی قونصل خانے موجود ہیں۔ یہ شہر سنگھائی، چینگدو، شنیانگ، ووہان اور گوانگچو ہیں۔ اسی طرح ہانگ کانگ میں بھی امریکی قونصل خانہ موجود ہے۔اس سے چند گھنٹے قبل امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے چین اور اس کی حکمراں جماعت کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔ پومپیو نے اپنے بیان میں چین کو ایک استبدادی اور دشمن ریاست قرار دیا۔اس سے قبل چین نے جمعرات کے روز کہا تھا کہ چین کی جانب سے جاسوسی اور املاکِ دانش (انٹلیکچوئل پیٹینٹ) کی چوری سے متعلق امریکی دعوے محض شرپسندی پر مبنی بہتان ہے۔ اس کا مقصد قونصل خانے کو بند کرنا تھا۔

امریکا نے منگل کے روز ہیوسٹن میں چینی قونصل خانے کو 72 گھنٹوں کی مہلت دیتے ہوئے اسے بند کرنے کا حکم جاری کیا تھا۔ امریکا نے دعوی کیا کہ چینی ایجنٹوں نے ٹیکساس میں ایک تنصیب سے ڈیٹا چرانے کی کوشش کی۔ ان میں دو جامعات میں طبی مراکز کی تحقیق سے متعلق معلومات شامل ہے۔قونصل خانے کی بندش کے اقدام نے دنیا کی دو سب سے بڑی معیشتوں کے درمیان کشیدگی کا ایک نیا باب کھول دیا۔یاد رہے کہ گذشتہ چند ماہ کے دوران امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور ان کی انتظامیہ کی جانب سے چین پر مختلف حوالوں سے سخت نوعیت کی تنقید کی جاتی رہی ہے۔ ان میں کرونا وائرس ، ہانگ کانگ کا معاملہ اور جاسوسی و تحقیقی مواد کی چوری نمایاں ترین ہیں۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close